کرکٹ سے جڑی ہرخبر اور زبردست ویڈیوز کے لیے ہمارا پیج لایک کریں
نیوزی لینڈ اور انگلینڈ کا دورہ پاکستان منسوخی کے بعد ہر طرف مایوسی دکھائ دے رہی ہے۔ انگلینڈ کے دورہ پاکستان سے دستبردار ہونے کے بعد انگلینڈ کے سابق کرکٹرز سمیت دیگر اعلی شحصیات کے رد عمل سامنے آگے۔


انگلینڈ کے سابق کرکٹر اور کمنٹیٹر مائیکل ایتھرٹن نے کہا ہے کہ دورہ پاکستان منسوخ کرنے پر ای سی بی کی خاموشی خوفناک ہے۔ مائیکل ایتھرٹن نے انگلش کرکٹ بورڈ کے

چیئرمین یان واٹمور کو سنجیدہ ردعمل نہ دینے پر شدیدتنقید کا نشانہ بنایا۔ مائیکل ایتھرٹن کا کہنا تھا کہ انگلش کرکٹ بورڈ یہ فرض کرتا ہے وہ ایک انتہائی کمزور بیان دے کر اس کے پیچھے چھپ سکتا ہے۔

پاکستانی کرکٹرز جنہوں نے گذشتہ موسم گرما میں یہاں بائیو سیکور ببل میں 2 ماہ گزارے تاکہ انگلش کرکٹ کو مالیاتی مسائل سے بچایا جا سکے، پاکستان کرکٹ حکام جنہوں نے کرکٹ کو ملک میں واپس لانے کے لیے


بہت کچھ کیا اور سپورٹرز اس سے بہتر سلوک کے مستحق ہیں۔ پاکستان کرکٹ بھی اس سے بہتر کی مستحق ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ای سی بی چاہتا ہے کہ کہانی غائب ہو جائے لیکن

صرف ایک چیز جو غائب ہوئی ہے وہ ای سی بی کا چیئرمین ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ منسوخی کے اعلان کے بعد سے واٹمور 5 دن سے خاموش ہے حالانکہ کے پاکستان کا منسوخ کردہ دورہ بھی صرف 4 دن کا تھا۔

مائیکل ایتھرٹن نے ٹویٹر پر ٹویٹ کرتے ہوۓ یہ بھی کہا کہ دورہ انگلینڈ سے قبل انگلش پلیئر پارٹنرشپ (ٹی ای پی پی) کا کھلاڑیوں سے مشورہ نہ لینے کا بیان پاکستانی شائقین کے زخموں پر نمک چھڑکنے کے مترادف ہے۔

پاکستان اور انگلینڈ میں کرکٹ کے حامی جاننے کے مستحق ہیں کہ دورے کو کیوں منسوخ کیا گیا؟ واضح رہے کہ انگلینڈ کی اس حرکت پر دیگر کھلاڑیوں سمیت انگلینڈ کے کھلاڑیوں نے بھی افسوس کا اظہار کیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں