کرکٹ سے جڑی ہرخبر اور زبردست ویڈیوز کے لیے ہمارا پیج لایک کریں
پاکستان بمقابلہ انگلینڈ تین میچز کی سیریز کا تیسرا اور آخری میچ 13 جولایی بروز منگل کو کھیلا جایے گا، میچ پاکستانی وقت کے مطابق شام 5 بجے کھیلا جایے گا، انگلینڈ کو سیریز میں 2-0 کی فیصلہ کن برتری حاصل ہے


پاکستان کی خراب پرفارمنس پر قومی ٹیم کو ہر طرف سے تنقید کا سامنا ہے، سابق کرکٹر انضمام الحق کا کہنا تھا کہ ایسی پرفانس سے یہی لگ رہا ہے جیسے ہر بیٹسمین ٹی ٹونٹی کھیلنے کی کوشش میں لگا ہوا تھا،

سعود شکیل کے علاواہ کسی نے ون ڈے کی طرح ٹک کر بیٹنگ کرنے کی کوشش ہی نہیں کی، سابق کرکٹر شعیب اختر کا کہنا تھا کہ ایورج کرکٹ بورڈ کی ایورج مینجمنٹ، اور

ایورج مینجمنٹ سے ایسی ہی ایورج ٹیم بنے گی، دنیا کی کرکٹ کہاں سے کہاں پہنچھ گیی اور ہم پیچھے ہی کھڑے ہیں، ایسی پرفارمنسز کی وجہ سے ہی

لوگ پاکستان کرکٹ کو دیکھنا بند کر گئے ہیں، رمیز راجہ کا کہنا تھا کہ ہم انگلینڈ کی بی ٹیم سے سیریز ہار گیے اس سے پتہ چلتا ہے کہ ہماری ٹیم کہاں کھڑی ہے اور ہم کس قسم کی کرکٹ کھیل رہے ہیں،

پاکستان کوانگلینڈ کو وائٹ واش کرنا چاہیے تھا مگر اب خود وائٹ واش ہونے کا خطرہ ہے، سابق سٹار آل راونڈر شاہد آفریدی نے کہا ہے کہ پاکستان کی موجودہ ٹیم جس لائحہ عمل کے ساتھ

کھیل رہی ہے اسے کسی بھی معیاری حریف کو آسانی سے شکست دینے میں بہت جدو جہد کرنی پڑے گی۔ ان کا کہنا ہے کہ ٹیم منیجمنٹ کو سمجھنا چاہیے کہ ایک بامقصد لائحہ عمل تیار کر کے

اسے لاگو کروانے کی سخت ضرورت ہے۔ شاہد آفریدی کا مزید کہنا تھا کہ جدید ایک روزہ میچ میں حریف ٹیم پر بیٹنگ اور بولنگ میں اٹیکنگ بولنگ کرنا ضروری ہو تا ہے۔

ذرائع کے مطابق پاکستانی ٹیم ان کھلاڑیوں پر مشتمل ہونے کا امکان ہے
فخر زمان، محمد رضوان، بابر اعظم ، سعود شکیل، سرفراز احمد، سہیب مقصود، محمد نواز، عثمان قادر، محمد حسنین، حسن علی، اور شاہین شاہ آفریدی شامل ہیں، مزید پچ اور موسم دیکھ کر ہتمی فیصلہ کیا جائے گا،

اپنا تبصرہ بھیجیں