دورہ پاکستان کےدوران شعیب اختر کی پسلیوں میں لگی گیند نے کتنا عرصہ زندگی اجیرن کیے رکھی؟ ایک عرصےبعد سچن ٹنڈولکر بول پڑے

119

کرکٹ سے جڑی ہر خبر اور زبردست ویڈیوز کے لیے ہمارا پیج لائیک کریں شکریہ
بھارت کے لیجنڈ بلے باز سچن ٹنڈولکر نے بالآخر اعتراف کر لیا کہ شعیب اختر کی پسلیوں میں لگنے والی گیند نے کیسے دو ماہ تک ان زندگی اجیرن کیے رکھی۔ ویب سائٹ ’پروپاکستانی‘ کے مطابق

سچن ٹنڈولکر نے اپنے ایک حالیہ انٹرویو میں اعتراف کیا ہے کہ جب بھارتی ٹیم 2007ءمیں دورہ پاکستان پر گئی، اس دوران ایک میچ میں دنیا کے تیز ترین باﺅلر شعیب اختر کی ایک گیند ان کی پسلیوں میں آ کر لگی،

جس کے بعد وہ دو ماہ تک نہ کھانس پائے اور نہ ہی پیٹ کے بل سو پائے تھے۔ سچن ٹنڈولکر نے بتایا کہ ”شعیب اختر کی گیند لگنے سے مجھے شدید تکلیف ہوئی،

جو دو ماہ تک برقرار رہی۔ گیند لگنے کے بعد اگرچہ میری حالت کافی خراب ہو گئی لیکن میں نے بیٹنگ جاری رکھی۔ یہی نہیں بلکہ میں نے سیریز کے تمام میچ کھیلے اور اس کے بعد آسٹریلیا کے ساتھ بھی پوری سیریز کھیلی۔

مجھے اندازہ ہی نہیں تھا کہ گیند لگنے سے کس قدر انجری ہوئی ہے۔ آسٹریلیا سے واپس بھارت آنے پر جب میرے پورے جسم کا سکین کیا گیا تو پتا چلا کہ انجری بہت سنگین نوعیت کی تھی۔“