تکلیف،ہوتی ہے کہ میں نےکبھی پاکستان میں ٹیسٹ میچ نہیں کھیلا، محمد عامرمایوس ہوگئے

60

کرکٹ سے جڑی ہر خبر اور زبردست ویڈیوز کے لیے ہمارا پیج لائیک کریں شکریہ
پاکستان کےسابق فاسٹ بولر محمد عامر مایوس ہیں کہ انہیں پاکستان میں ٹیسٹ کرکٹ کھیلنے کا موقع نہیں ملا۔ ایک انٹرویو میں ان کا کہنا تھا کہ انھیں اب بھی فخر ہے کہ کئی دھچکوں کے باوجود انہوں نے ملک کے لئے 36 ٹیسٹ کھیلے۔


محمد عامر نے کہا کہ تکلیف ہوتی ہے کہ میں نے اپنے آبائی ملک میں کبھی ٹیسٹ میچ نہیں کھیلا لیکن اس کے پیچھے کچھ وجوہات ہیں، جب میں نے بین الاقوامی کرکٹ کھیلنا شروع کیا تو

پاکستان میں کوئی میچ نہیں کھیلا جارہا تھا اور اس کے بعد میں نے ٹیسٹ کرکٹ سے ریٹائرمنٹ لے لی تھی۔ عامر نے کہا کہ اس کے باوجود مجھے فخر ہے کہ میں نے ٹیسٹ کرکٹ میں

ایک یا دو بار نہیں بلکہ 36 بار پاکستان کی نمائندگی کی ہے۔ محمد عامر کا کہنا تھا کہ اگر قسمت نے مجھ پر احسان کیا ہوتا کہ


جب میں بین الاقوامی کرکٹ کھیل رہا تھا تو پاکستان ہوم سیریز کھیلتا تو یہ میرے لئے ایک بہت بڑا اعزاز اور بہت خاص ہوتا لیکن میرے لئے سب سے اہم بات یہ ہے کہ میں نے ٹیسٹ کرکٹ میں اپنے ملک کی نمائندگی کی ہے۔

انہوں نے ان افواہوں کو بھی رد کر دیا کہ وہ بین الاقوامی کرکٹ سے ریٹائرمنٹ واپس لینے کے بارے میں کوئی منصوبہ رکھتے ہیں۔ محمد عامر کا کہنا تھا کہ میں نے ہمیشہ ہر ایک کی رائے اور خیالات کا احترام کیا ہے۔

میرے فیصلے میں خود غرضی نہیں تھی اور کچھ ایسی چیزیں ہوئیں جن کے بارے میں آپ کو ایک اہم فیصلہ کرنے سے پہلے سوچنا پڑتا ہے ،اس وقت میرا بین الاقوامی کرکٹ میں

واپسی کا کوئی امکان نہیں ہے لیکن اگر حالات بہتر ہوتے ہیں تو پھر کون جانتا ہے کہ شاید آپ مجھے مستقبل میں ایک بار پھر پاکستان کے لئے کھیلتے ہوئے دیکھیں گے۔