کرکٹ سے جڑی ہرخبر اور زبردست ویڈیوز کے لیے ہمارا پیج لایک کریں
پاکستان کرکٹ بورڈ نے پی ایس ایل سکس کے بقیہ بیس میچز مں بائیوسیکیور ببل کیلئے غیرملکی ماہرین کی خدمات حاصل کر لی ہیں لیکن ببل کی مکمل طور پر آوٹ سورس نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔


تفصیلات کے مطابق ٹورنامنٹ کے دوران سخت اقدامات کیئے جائیں گے ، کھلاڑیوں اور ٹیم انتظامیہ کو ہوٹل میں پارٹی کرنے کی اجازت نہیں ہو گی ، فیملی کو بھی آنے کی اجازت نہیں ہو گی ،

پروٹوکول توڑنے والے کے خلاف سخت اور فوری کارروائی عمل میں لائی جائے گی ، پی سی بی کے ایک اعلیٰ افسر نے نام نہ ظاہر کرنے کی شرط پر بتایا کہ سخت پروٹوکول بنائے جائیں گے ،

بائیوسیکیور ببل کیلئے جس کمپنی کی خدمات لی جارہی ہیں وہ انگلینڈ اور سری لنکا میں ببل بنا چکی ہے ۔ برطانوی کمپنی کے چند لوگ کراچی آ کر سسٹم بنائیں گے اور اس کی مانیٹرنگ کریں گے ،


سسٹم کو پاکستان کے لوگ چلائیں گے ، ایک بار ببل میں داخل ہو نے والا شخص ٹورنامنٹ ختم ہونے تک باہر نہیں جا سکے گا ، پی ایس ایل کی ساکھ کو نقصان پہنچانے والے افسر اب اس لیگ کا حصہ نہیں ہوں گے ،

جلد پی ایس ایل گورننگ کونسل کی میٹنگ بلا کر فرنچائز کو رپورٹ پر پریزنٹیشن دی جائے گی۔ ایونٹ کے تمام شرکاء کیلئے 22 مئی سے ایک ہی ہوٹل میں قرنطینہ کی سات روزہ مدت کا آغاز کیا جائے گا ، بعدازاں تین روزہ ٹریننگ سیشنز کے بعد یکم جون سے ایونٹ شروع ہو جائے گا ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں