مکی آرتھر نےسرفراز احمد کی کپتانی کے بارے میں نیاانکشاف کردیا

285

کر کٹ سے جڑی ہر خبر اور زبردست ویڈیوز کے لیے ہمارا پیج لایک کریں
پاکستان کرکٹ ٹیم کےسابق ہیڈ کوچ مکی آرتھر نے اپنے دور کے آخری کپتان سرفراز احمد کوسب سے بہتر کپتان قرار دے دیا ہے۔ مکی آرتھر نے عامرسہیل کے یوٹیوب چینل پر بات کر تے ہوئے کہا ہےکہ


پاکستان کرکٹ ٹیم کےساتھ کام کرنا سب سے زیادہ اچھا لگا، پاکستانی میڈیا کو ڈیل کرنا مشکل تھا کیونکہ وہ شروع سے تعاون ہی نہیں کرتا تھا۔ پاکستان میں اچھا ٹیلنٹ ہے،

میں نے جب چارج سنبھالا تو اسٹرکچر وغیرہ کے ساتھ رہتے ہوئے کام کرنا تھا، ٹیم کی رینکنگ بہتر کرنامشن تھا، ہم نے پہلی پوزیشن بھی حاصل کی، مصباح اور یونس جیسے بڑے کھلاڑی تھے۔

سری لنکا کے لئے کوچنگ سنبھالنے والے مکی کہتے ہیں کہ میں یقین رکھتا ہوں کہ ہم 2019 کا ورلڈکپ جیت سکتے تھے، ویسٹ انڈیز سے ہار نے کا دکھ رہا، اس کے باوجود

اس کے باوجود ہم نے پوائنٹس ٹیبل پر نیوزی لینڈ کے ساتھ نمبر 4 پر فنش کیا، نیوزی لینڈ نیٹ رن ریٹ پر آگے چلا گیا، ہم نے بڑی ٹیموں کوہرا دیا تھا، سیمی فائنل کھیلنے والی اکثر ٹیمیں ہم سے ہاری تھیں۔ میں اپنے دور میں سب کچھ تو حاصل نہیں کرسکا لیکن

بہت کچھ اچھا ہوا، ٹیسٹ ٹیم نمبر ون بنی، چیمپئنز ٹرافی جیتی۔ ٹی 20 میں اچھا رہے۔ مکی آرتھر نے انکشاف کیا ہے کہ سرفرازاحمد کے ساتھ میرا تعلق بہت اچھا رہا، وہ ایک کمال کپتان تھا۔ ایک بات اس میں ایسی دیکھی جو اس سے پہلے کسی کپتان میں میں نے نہیں دیکھی تھی،

سرفراز اگر میدان میں پلیئرز پر بول رہے ہو تے تھے، ہر ایک کے ساتھ لگے ہوتے تھے لیکن جب ڈریسنگ روم میں آتے تو ان کے بھائی بن جا تے اور ہر ایک سے گھل مل جاتے،

جیسا کہ کچھ ہوا ہی نہیں، دنیا نے صرف ان کو گرائونڈ میں دیکھا ہے لیکن ڈریسنگ روم میں کسی نے نہیں دیکھا، سرفراز اپنے کھلاڑیوں کے مقبول ترین کپتان تھے،

ایسی بات میں نے مائیکل کلارک، گریم اسمتھ اور مصباح الحق کے ساتھ کام کر تے نہیں دیکھی، سویہ بات انہیں دوسروں سے ممتاز بناتی ہے۔