کرکٹ سے جڑی ہرخبر اور زبردست ویڈیوز کے لیے ہمارا پیج لایک کریں
قومی ٹیم کے کپتان بابر اعظم اور چیف سلیکٹر محمد وسیم کے درمیان اختلافات کی خبریں گردش کر رہی ہیں اور نجی نیوز چینل دنیا نیوز نے دعویٰ کیا ہے کہ دورہ جنوبی افریقہ اور زمبابوے کے لیے کچھ کھلاڑیوں کو


کچھ کھلاڑیوں کو ٹیم میں شامل کیے جانے پر بابراعظم ناراض تھے اور انہوں نے ٹیم مینجمنٹ کو واضح کیا تھا کہ وہ ڈمی کپتان نہیں بنیں گے ۔ دنیا نیوز کے مطابق بابراعظم نے

پی ایس ایل 6 میں شاہنواز دھانی کو کارکردگی کی بنیاد پر ٹیم میں شامل کیے جانے پر ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ فاسٹ باولر کو اتنی جلدی ٹیم میں نہیں لایا جانا چاہیے

اس کے لیے فاسٹ باولر کو متواتر ڈومیسٹک فارمیٹ میں کرکٹ کھیلنی چاہیے ،پی ایس ایل کی بنیاد پر باولر کو ٹیم میں لانا ٹھیک نہیں۔ قومی ٹیم کے کپتان نے محمد وسیم جونیئر کو بھی وقت سے پہلے ٹیم میں شامل کیے جانے پر


حیرانگی کا اظہار کیا اور کہا کہ آل راونڈر قومی ٹیم کا بڑا ٹیلنٹ ہے لیکن انہیں جلد از جلد ٹیم میں نہ لایا جائے،نسیم شاہ اس کی بہترین مثال ہیں۔ بابر اعظم چاہتے ہیں کہ ون ڈے سکواڈ میں آل راونڈر حارث سہیل کو شامل کیا جائے لیکن ٹیم سلیکشن کمیٹی نے

ان کی اس رائے کو مسترد کر دیا۔ بابر اعظم نے ٹیسٹ سکواڈ میں یاسر شاہ کو شامل نہ کیے جانے پر بھی تحفظات کا اظہار کیا ہے، چیف سلیکٹر محمد وسیم کے ساتھ ملاقات کے دوران انہوں نے یاسر شاہ کو ٹیم میں شامل کیے جانے پر زور دیا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں