پی ایس ایل چھوڑ کر جانے کا افسوس ہے، کرس گیل نے جاتے جاتےشائقین کو افسردہ کر دیا

32

کرکٹ سے جڑی ہرخبر اور زبردست ویڈیوز کے لیے ہمارا پیج لایک کریں
کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے کھلاڑی کرس گیل کا کہنا ہے کہ وہ ویسٹ انڈیز ٹیم کے ساتھ اپنی قومی ڈیوٹی کے لیے فی الحال وطن واپس جارہے ہیں لیکن وہ لاہور میں ہونے والے پی ایس ایل مرحلے میں واپس آئیں گے۔


کراچی میں لاہور قلندرز کے خلاف کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کو شکست کے بعد میڈیا انٹرویو میں کرس گیل نے کہا کہ انہیں افسوس ہے کہ وہ لیگ کو فی الحال ادھورا چھوڑ کر ویسٹ انڈیز جارہے ہیں کیوںکہ

انہیں اپنی نیشنل ٹیم کو جوائن کرنا ہے لیکن ابھی اس لیگ میں بہت کرکٹ باقی ہے اور وہ لاہور کے مرحلے میں دوبارہ واپس آئیں گے۔ جارح مزاج بیٹسمین نے کہا کہ

ان کی خواہش تو تھی کہ وہ پی ایس ایل کا کوئی میچ مس نہ کریں اور پوری لیگ کھیلیں، یہی وجہ تھی کہ انہوں نے اس لیگ میں اپنا نام درج کرایا۔

کرس گیل کا کہنا تھا کہ وہ 15 سال بعد پاکستان آئے اور ارادہ تھا کہ اپنی کارکردگی سے لیگ میں چھا جاتے اور عوام کو بھرپور تفریح فراہم کرتے۔ بلے باز نے کہا کہ وہ اپنی کارکردگی سے مطمئن ضرور ہیں لیکن

ٹیم کی شکست پر افسوس ہے، ٹیم ایسا اسٹارٹ ہرگز نہیں چاہتی تھی لیکن ابھی ٹورنامنٹ کا آغاز ہی ہے، بہت میچز ہیں، امید ہے گلیڈی ایٹرز ان دو میچز کی شکست کو فراموش کرکے بقیہ میچز میں مثبت انداز میں کھیلتے ہوئے کم بیک کرے گی۔

ایک سوا ل پر کرس گیل نے امید ظاہر کی کہ پاکستان سپر لیگ میں آگے جا کر فل ہاؤس کراؤڈ دیکھنے کو ملے کیوں کہ جب میدان میں ہر شخص کسی ایک کھلاڑی کا نام لے کر اس کی حوصلہ افزائی کر رہا ہوتا ہے تو بہت اچھا لگتا ہے،

اس سے نہ صرف بولر اور بیٹسمین کے درمیان معرکے کا مزہ آتا ہے بلکہ میچ کا ماحول بھی خوب بنتا ہے۔ کوئٹہ اور لاہور کے درمیان ہونے والے میچ پر گفتگو کرتے ہوئے کرس گیل نے کہا کہ

لاہور قلندرز کے بولرز نے شروع میں بہت اچھی بولنگ کی اور گلیڈی ایٹرز کو تیز آغاز سے محتاط رکھا، بعد میں سرفراز احمد کے ساتھ اچھی پارٹنرشپ لگی لیکن شاید گلیڈی ایٹرز کی ٹیم آخر میں 20 رنز کم بناپائی جس کی وجہ سے شکست ہوئی۔