محمد حفیظ کو باہر نکالنےکا خمیازہ بھگتنا پڑا ہے، شعیب اختر نے حیران کن بات کہہ دی

108

کرکٹ سے جڑی ہر خبر اور زبردست ویڈیوز کے لیے ہمارا پیج لایک کریں
راولپنڈی ایکسپریس شعیب اختر نے کہا ہے کہ 4 یا 5 بڑی وجہ کی بنیاد پر ہارے ہیں، اپنے آفیشل یوٹیوب چینل پر راشد لطیف اور ڈاکٹر نعمان کے ساتھ بات چیت میں انہوں نے کہا ہے کہ


انہوں نے کہا ہے کہ ہمار اپرابلم یہ ہے کہ جیتنے کے چکروں میں اور نوکری بچانے کے خیال سے چلتے ہیں راشد لطیف کہتے ہیں کہ وننگ کمبی نیشن کا بہانہ بناکر ٹیم تبدیل کرنے سے گریز کرنا عقل مندی نہیں ہے کیونکہ

جو لڑکے پرفارم نہیں کر رہے، ان کو وننگ کمبی نیشن کا ایج دینازیا دتی ہے۔ ڈاکٹر نعمان نے کہا ہے کہ نہ ہم ٹیم بنا رہے ہیں اور نہ میچ جیت رہے ہیں۔ راشد نے اعتراف کیا کہ

بیسٹ ٹیسٹ سائیڈ نے سیریز نہیں جیتی لیکن اکثر اچھی ٹیم رہ ہی جاتی ہے۔ شعیب اختر کہتے ہیں کہ حفیظ کو باہر نکالنےکا خمیازہ بھگتنا پڑا ہے،

پہلے دن سے کہہ رہے ہیں کہ اچھا وہ ایک نہیں تو کم سے کم 2 میچ میں واپسی کرسکتے تھے، انہیں بائیو سیکیور ببل کے ڈرامے سے نکالا گیا یہ غلط ہوا ہے۔ راشد لطیف نے اس پر کہا ہے کہ

جب سے نکالا گیا تھا، تب سے ہم کہہ رہے ہیں کہ یہ غلط ہوا ہے۔ شعیب اختر کہتے ہیں کہ اب سیریز کے ہارنے کے ڈر سے تبدیلی ہوگی۔ ہم ہار نہ جائیں یا وہ نہ ہوجائے یا یہ نہ ہوجائے تو کس طرح تبدیل کریں گے۔

ہم چیف سلیکٹر محمد وسیم کو اشارہ ہی دے سکتے ہیں کہ یہ کھلاڑی اچھا ہے یا نہیں ہے۔ اسی طرح ٹیسٹ سلیکشن میں بھی غلطیاں تھیں۔ شعیب اختر نے خبردار کیا ہے کہ اب تیسرا ٹی 20جیتنا لازمی ہے۔

اب عزت و بے عزتی کا مسئلہ بن جائے گا کیونکہ جنوبی افریقا کی بی ٹیم کھیل رہی ہے۔ان سے ہار برا نتیجہ نکالے گی۔ افتخار یا فہیم کو اوپرکھلادیں تو بہتر ہوگا۔ شعیب اختر کہتے ہیں کہ شاداب اور عماد بھی ضروری ہیں اور

اشارے بھی بڑے ضروری ہیں۔ راشد لطیف نے خبردار کیا ہے کہ آج کامیچ جیتنا بہت ضروری ہے ورنہ دونوں کا انجام ٹھیک نہیں ہوگا،اس پر شعیب نے واضح کیا کہ تینوں کا انجام خراب ہونے والا ہے۔