مجھے اس پاکستانی کھلاڑی میں مستقبل کا اسٹیون سمتھ اورکین ولیمسن نظرآ رہا ہے ,لیوک رونچھی

113

کرکٹ سے جڑی ہرخبر اور زبردست ویڈیوز کے لیے ہمارا پیج لایک کریں
پاکستان کرکٹ اس وقت کرکٹ کے تمام ڈپارٹمنٹس چاہے بیٹنگ ہو بولنگ ہو یا پھر فیلڈنگ سب میں فقدان کا سامنا کر رہی ہے.پاکستان کے نیوزی لینڈ سے بری طرح سریزہارنےکے بعد جہاں ٹیم پاکستان کوعوام کی طرف سے


تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے وہاں نیوزی لینڈ کے پلیئرز پاک ٹیم کی دھارس بندھانے میں بھی پیچھے نہیں رہے.نیوزی لینڈ قومی ٹیم اور آسڑیلیا دو ملکوں کی قومی ٹیم کی نمائندگی کرنے والے

سابق کرکٹر لیوک رونچھی بھی پاکستان کرکٹ ٹیم کی ڈھارس بندھانے کے لیے کود پڑے ہیں.انھوں اپنے ایک انٹرویو میں پاکستان کرکٹ کے حوالے سے بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ

پاکستان ٹیم میں ایسے کرکٹرز بھی موجود ہیں جوآگے جا کرکرکِٹ میں بڑا نام کمانے والے ہیں.انھوں نے کہا کے پاکستان میں بابراعظم کے سٹروکس سے بہت امپرس ہوںان میں مجھے مستقبل کاسپرسٹار نظر آ رہا ہے.


مزید ان کا کہنا تھا کہ مجھے ان میں کرکٹ کی وہی تکنیک نظر آتی ہیں جو آپ ابھی اسٹیون اسمتھ, کین ولیمسن اور ویرات کوہلی میں موجود ہیں ان کا کہنا تھا کہ میں نے آسٹریلیا اور پاکستان

سریز کے دوران بابراعظم کی بیٹنگ دیکھی تھی جس نے مجھے خاصا متاثر کیا. بابراعظم اس وقت پاکستان کے سب سے بہترین بلے باز ہیں. ان کے سٹروکس بڑے خوصورت ہوتےہیں. لیوک رونچھی کا مزید کہنا تھا کہ

بابراعظم کے لیے کوئی بولر چاہے سپنر ہو یا فاسٹ مشکل پیدا نہیں کر سکتا کیونکہ ان کے شاٹس کھیلنے انداز ایسا ہے بولرز سمجھ ہی نہیں سکتے.