پاکستان عماد وسیم کےساتھ محمد عامر جیسا سلوک کر رہا ہے، راشد لطیف نے حیران کن بات کہہ دی

314

کرکٹ سے جڑی ہرخبر اور زبردست ویڈیوز کے لیے ہمارا پیج لایک کریں
قومی ٹیم کے سابق کپتان راشد لطیف کا خیال ہے کہ پاکستان ٹیم مینجمنٹ آل راؤنڈر عماد وسیم کا صحیح استعمال نہیں کر رہی ہے جس سے بالآخر ان کا اعتماد کم ہوسکتا ہے اور وہ حال ہی میں


راشد لطیف نیوزی لینڈ کے خلاف تیسرے ٹی ٹونٹی انٹرنیشنل میں آل راؤنڈر عماد وسیم کو ڈراپ کرنے کے فیصلے پر خوش نہیں۔ راشد لطیف کا کہنا تھا کہ ٹیم مینجمنٹ نے

تیسرے ٹی ٹونٹی میں بٹھا کر عماد کے اعتماد کو متزلزل کردیا، ٹیم میں عماد وسیم جیسا کوئی اور کھلاڑی نہیں ہے، پچھلے میچ میں عماد کو آخر میں گیند تھمایا گیا جبکہ

بیٹنگ آرڈر میں بھی وہ آل رائونڈر فہیم اشرف کے بعد بیٹنگ کرنے آئے۔ عماد وسیم نے پوری سیریز میں مجموعی طور پر پانچ اوورز کیے اور پہلے دونوں ٹی ٹونٹی مقابلوں میں اپنا کوٹہ پورا نہیں کیا۔

پہلے ٹی ٹونٹی میں 14 گیندوں پر 19 رنز بنانے کے بعد انہوں نے دوسری ٹی ٹونٹی میں 5 گیندوں پر 10 رنز بنائے تھے۔ راشد لطیف نے مزید کہا کہ 32 سالہ آل راؤنڈر کو عزت دینی چاہیئے کیوں کہ

وہ اپنی اہمیت ثابت کر چکے ہیں اور اگلے سال بھارت میں ہونے والے ٹی 20 ورلڈ کپ میں پاکستان کے بولنگ اٹیک میں اہم کردار ثابت ہو سکتے ہیں۔ راشد لطیف نے کہا کہ ہر کھلاڑی کو عزت دی جانی چاہئے،

اس لئے نہیں کہ وہ سینئر کھلاڑی ہے بلکہ اس کی کارکردگی کی وجہ سے۔ عماد نے بین الاقوامی سطح پر قدم رکھنے کے بعد سے اب تک وہ عزت حاصل نہیں کی جس کے وہ مستحق ہیں لیکن

اس کے علاوہ بھی جب انہیں موقع ملتا ہے تو وہ کار کردگی کا مظاہرہ کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ٹی ٹونٹی میں عماد وسیم کا اکانومی ریٹ حیرت انگیز ہے اور آپ اسے سائیڈ لائن کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔

اگلا ٹی ٹونٹی ورلڈ کپ ہندوستان میں ہے جہاں عماد بہت کارآمد ثابت ہو سکتا ہے۔ اگر ٹیم مینجمنٹ نے اپنا ذہن بنا لیا ہے کہ آپ عماد وسیم کے ساتھ اتنا براسلوک کریں گے تو آپ دوسرا محمد عامر تیار کر رہے ہیں۔