ٹیم مینجمنٹ کی انا کی وجہ سےپاکستان کرکٹ نیچے جا رہی ہے“ محمد عامر کی،ریٹائرمنٹ کے معاملے پر کامران اکمل بھی،خاموش نہ رہ سکے

127

کرکٹ سے جڑی ہرخبر اور زبردست ویڈیوز کے لیے ہمارا پیج لایک کریں
پاکستان کرکٹ ٹیم کے وکٹ کیپر بیٹسمین کامران اکمل نے خبردار کیا ہے ٹیم مینجمنٹ کی انا کی وجہ سے پاکستان کرکٹ نیچے جارہی ہے، عامر کی ریٹائرمنٹ سے نقصان پی سی بی کا ہو گا اور یہ پاکستان کرکٹ کیلئے بھی اچھا نہیں ہے۔


تفصیلات کے مطابق لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کامران اکمل نے کہا کہ محمد عامر نے ٹیم مینجمنٹ کے روئیے سےدلبرداشتہ ہوکر یہ فیصلہ کیا، عامر میں ابھی بہت کرکٹ باقی ہے،

ہرلیگ میں وہ پرفارم کر رہا ہے، اسے فرق نہیں پڑے گا، نقصان پی سی بی کا ہی ہو گا اور یہ پاکستان کرکٹ کیلئے بھی اچھا نہیں ہے۔ ٹیم سے نظر انداز وکٹ کیپر نے کہا کہ 6 ، 7 سال سے

سلیکشن معاملات میں تسلسل نام کی کوئی چیز نہیں، ٹی 20 پرفارمنس پر ٹیموں کا انتخاب ہوگا تو اس سے محمد عامر کی طرح اور بہت سے کھلاڑی کھیل کو خیرباد کہنے پر مجبور ہوجائیں گے۔


میں اپنی کرکٹ انجوائے کررہا ہوں، اگر میں ٹیم مینجمنٹ کے روئیے کی وجہ سے ایسا سوچتا تو پانچ سال پہلے ہی میں بھی کرکٹ سے ریٹائرمنٹ لے چکا ہوتا۔ وکٹ کیپر نے موقف اختیار کیا کہ ٹیم مینجمنٹ ارکان اپنے آپ کو چھپانے کیلئے لڑکوں کے مستقبل سے کھیلتے ہیں،

کرکٹ کا گراف اوپر لانے کیلئے سلیکشن کمیٹی ارکان اور کوچز کو اپنی انا ختم کرنی ہو گی، عمر امین، محمد نواز، خالد عثمان، احمد شہزاد، عثمان صلاح الدین اچھی پرفارمنس کے باوجود منتخب نہیں ہو رہے، سیزن ختم ہونے پر سمیع اسلم کی طرح بہت سے لڑکے جانے کیلئے تیار ہیں۔

کامران اکمل کا کہنا تھا کہ ڈومیسٹک کرکٹ میں ٹیسٹ کھلاڑیوں کو لفٹ نہیں کرائی جاتی، بابر اعظم ایک سسٹم سے اوپر آیا، اس کی سلیکشن صرف ٹی 20 پرفارمنس پر نہیں ہوئی، کسی نے سوچا کہ اب بابراعظم جیسا کھلاڑی کیوں نہیں آرہا، جب تک میرٹ پر ٹیم نہیں بنے گی اس وقت تک پاکستان کرکٹ اوپر نہیں جاسکتی۔