کوئنز ٹائون کرکٹ نہیں سیروتفریح کامقام، رمیز راجہ نے بابر اعظم کےزخمی ہونے کی اصل وجہ بتادی

505

کرکٹ سے جڑی ہرخبر اور زبردست ویڈیوز کے لیے ہمارا پیج لایک کریں
پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان،سابق اوپنر اور ممتاز کمنٹیٹر رمیز راجہ نے پاکستانی ٹیم کے کوئنز ٹائون پریکٹس وینیو پر سوالات اٹھادیئے ہیں اور مدلل گفتگو میں انہوں نے بتایا ہے کہ یہ مقام بھی کھلاڑیوں کےان فٹ ہونے کا سبب بن رہا ہے۔


رمیز راجہ کہتے ہیں کےقید تنہائی میں 14 دن گزارنا نہایت مشکل زندگی ہے، بعض اوقات آپ کا ذہن آپ سے سوال کرتا ہے کہ یہ کیا ہورہا ہے، کئی لیول پر اتنی سختی سے گزرنا پڑتا ہے۔

نیوزی لینڈ میں کئی پلیئرز نے ذہنی تھکاوٹ کی بات کی ہے تو کئی اب ان فٹ ہورہے ہیں کیونکہ گرائونڈ میں آنے کے بعد ایسا لگنے لگتا ہے کہ آپ گیم لیول سے نیچے گرگئے ہیں۔

رمیز راجہ نےاپنےآفیشل یوٹیوب چینل پر کہا کہ14 دن کی قیدکے بعد فوری ایکشن میں آنے سےانجری کاخطرہ ہوجاتا ہے، ایسا ہی کچھ بابر اعظم کے ساتھ ہوا اور وہ انگوٹھے میں فریکچر کی وجہ سے باہر ہوگئے ہیں۔

بابر اعظم اہم کھلاڑی ہیں، سب انکو کھیلتے دیکھنا چاہتے ہیں، ان کا نہ ہونا انٹرنیشنل کرکٹ کے لئے نقصان دہ ہے۔ بابر سب کے لئے اہم ہیں، وہ پاکستان کے لئے بھی اچھے ہیں، امام بھی ان فٹ ہیں، چنانچہ یہ قرنطینہ پاکستان کو لے بیٹھ سکتا ہے، ٹیم کا سیٹ ہونا،

کمبی نیشن کا بننا اور ذہنی وجسمانی بہتری کا ہونا بہت بڑا چیلنج بن گیا ہے۔ میں حیران تھا کہ پاکستان کو پریکٹس کے لئے کوئنز ٹائون کیوں بھیج دیا گیا، وہ لوگ جو نیوزی لینڈ نہیں گئے، میں ان کا بتادوں کہ کوئنز ٹائون دنیا کی خوبصورت ترین جگہ ہے، یہ سیرو تفریح کا مقام ہے،

یہاں ریگولر کرکٹ نہیں ہوتی ہے اور یہاں کرکٹ کی جدید سہولیات بھی نہیں ہیں،چھٹیاں منانے کے لئے لوگ یہاں جاتے ہیں۔ کوئنز ٹائون میں اعلیٰ پائے کی پریکٹس سہولیات نہیں ہونگی، پچ بھی بہتر کوالٹی کی نہیں ہوگی۔

یہ بھی بڑی اہم چیزیں ہیں کہ جب آپ ٹور کا شیڈول دیکھیں توجان سکیں کہ آ پ کو کہاں کہاں جانا ہے۔ میرے خیال میں کوئنز ٹائون پریکٹس کے لئے مناسب جگہ نہیں تھی، یہاں پریکٹس کرنا اچھی حکمت عملی نہیں تھی، میں سمجھتا ہوں کہ گرائونڈ اور پچ کی وجہ سے بابر کو انگوٹھے پر گیند لگا ہوگا۔