پاکستانی ٹیم کے دورے سےایک سال پہلے عمران خان نے مجھےانگلینڈ بھیج دیا،وسیم اکرم نے شاندار بات کہہ ڈالی

91

کرکٹ سے جڑی ہرخبر اور زبردست ویڈیوز کے لیے ہمارا پیج لایک کریں
معروف ادارے وژڈن نے اپنی یادداشتوں سے سوئنگ کے سلطان کا پرانا انٹر ویو کچھ اس انداز میں دوبارہ شائع کیا ہے کہ آج کے دور کے کرکٹرز کے لئے کائونٹی کرکٹ کیوں اہم نہیں ہے۔ وسیم اکرم کہتے ہیں کہ


وسیم اکرم کہتےہیں کہ 1986میں مجھے عمران خان نے کہا کہ پاکستان کے 1987کے دورہ انگلینڈ سے قبل انگلینڈ کا پہلا دورہ کروں، کیونکہ عمران خان نے مجھے انگلینڈ میں

لیگ کرکٹ کھیلنے کا کہا تھا۔ وہ چاہتے تھے کہ میں موسم کا عادی ہو جائوں، وکٹوں کوسمجھوں، میں نے 6ہفتے کرکٹ کھیلی۔ کیا آج کے کرکٹرز میں یہ عزم نظر آتاہے۔ 1988 میں لنکاشائر کے ساتھ

اپنے سیزن کے بعد میں آسٹریلیا گیا تھا۔ میں دنیا کا نمبر ایک بائولر بن گیا، مجھے پہلے ٹیسٹ میں 11 وکٹیں ملی ، چنانچہ کاؤنٹی کرکٹ کے ایک سال نے میرے لئے نیا جہاں کھول دیا،وسیم اکرم کہتے ہیں کہ ریورس سوئنگ میں ہم فنکار تھے اور ہم نے یہ فن عمران خان سے سیکھا تھا۔