چیف سلیکٹرشپ کےمضبوط امیدوار محمد اکرم کس طرح کی سلیکشن کمیٹی کے حامی ہیں؟جانیے

76

کرکٹ سے جڑی ہرخبر اور زبردست ویڈیوز کے لیے ہمارا پیج لایک کریں
پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) چیف سلیکٹرشپ کے مضبوط امیدوار سابق ٹیسٹ کرکٹر محمد اکرم آزادانہ حیثیت میں کام کرنے والی راوئتی سلیکشن کمیٹی کے حامی ہیں جن کا کہنا ہے کہ پی سی نے مجھ سے رابطہ کیا ہے مگر ابھی کچھ حتمی طور پر طے نہیں ہوا۔


تفصیلات کے مطابق مصباح الحق کی جگہ چیف سلیکٹر کی پوسٹ سنبھالنے کیلئے محمد اکرم مضبوط امیدوار ہیں جنہوں نے ایک انٹرویو میں تصدیق کی کہ پی سی بی نے مجھ سے رابطہ کیا ہے اور

ان کی دیگر افراد سے بھی بات چیت ہورہی ہو گی مگر ابھی کچھ حتمی طورپر طے نہیں ہوا، جب ہماری بات شروع ہوئی تو پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) کے میچز قریب تھے،

میں پشاور زلمی کے ساتھ اپنی ذمہ داریوں کو نظر انداز نہیں کر سکتا تھا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کیلئے کام کرنا بڑے اعزاز کی بات ہے لیکن اس کے ساتھ پہلے سے موجود ذمہ داریوں کو بھی مکمل کرنا ہوتا ہے،

ابھی میرے پشاور زلمی کے ساتھ بھی چند کام زیر تکمیل ہیں، کوچنگ ہو یا سلیکشن پاکستان کیلئے کام کرنے کا ایک جذبہ ہمیشہ سے موجود ہے،اگر فرنچائز کے ساتھ ذمہ داریاں مکمل ہو جاتی ہیں اور


اس دوران انٹرویو کیلئے بلایا گیا تو ضرور جاﺅں گا۔ محمد اکرم نے کہا کہ ایسوسی ایشنز کے 6کوچز بڑے تجربہ کار ہیں، ان کی رائے کی اہمیت ہے لیکن میری ذاتی رائے میں آزادانہ حیثیت میں کام کرنے والی سلیکشن کمیٹی بہتر ہوگی،

اگر میں خود کوچ کے طور پر کام کر رہا ہوں تو میری کوشش ہوگی کہ سلیکشن کمیٹی کا حصہ نہ بنوں، یہ بھی دیکھنا یہ ہوگا کہ کوچز ڈریسنگ روم میں کسی کرکٹر کو عدم انتخاب کی وجہ بتانے میں کوئی پریشانی تو محسوس نہیں کرتے،

کسی بھی کوچ کی خواہش ہوتی ہے کہ ڈریسنگ روم کا ماحول خوشگوار رہے، اسی لئے بہتر ہے کہ ایک آزادانہ حیثیت میں کام کرنے والی سلیکشن کمیٹی ہو۔