رمیزراجہ کوقومی ٹی 20 ٹورنامنٹ میں جوش و جذبے کی کمی کھٹکنے لگی، کون سی ٹیمیں دل و جان سے کھیل رہی ہیں اور کن میں مایوسی جھلکتی ہے؟ سب کچھ بتادیا

134

کرکٹ سے جڑی ہرخبر اور زبردست ویڈیوز کے لیے ہمارا پیج لایک کریں
پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق کھلاڑی اور موجودہ کمنٹیٹر رمیز راجہ کو نیشنل ٹی 20 کپ میں جوش و جذبے کی کمی کھٹکنے لگی ہے جن کا کہنا ہے کہ ایک، دو ٹیمیں صرف خانہ پری کر رہی ہیں جبکہ


تفصیلات کے مطابق قومی ٹی 20 ٹورنامنٹ کا پہلا مرحلہ ملتان میں جاری ہے جس میں کئی ٹیموں کے کھلاڑیوں کی فٹنس اور فیلڈنگ غیر معیاری نظر آ رہی اور اس کا اثر مجموعی کارکردگی پر بھی پڑتا دکھائی دیا،

اس حوالے سے رمیز راجہ نے کہاکہ جوش اور جذبہ ٹی 20 کرکٹ کی پہچان ہے مگر ملتان میں تاحال اس کی کمی دکھائی دی ہے، مسلسل غیر معیاری کھیل پیش کرنے والی 1،2 ٹیمیں تو

مقابلے کی دوڑ میں شامل ہونے کے موڈ میں نظر نہیں آتیں اور صرف خانہ پری کررہی ہیں، چند کھلاڑی یہ سوچ رکھتے ہیں کہ بڑا سکور کریں یا نہیں


سکور کریں یا نہیں ان کی جگہ کو کوئی خطرہ نہیں اور کچھ ایسے بھی ہیں جنہیں اندازہ ہے کہ رنز بنانے یا وکٹیں لینے کے باوجود ان کی قومی ٹیم میں شمولیت ممکن نہیں ہوسکے گی۔

انہوں نے کہا کہ اس طرح کے رویوں سے کوئی بھی ٹورنامنٹ کامیاب نہیں ہو سکتا، ایک مستند کرکٹر کیلئے اہم ہوتا ہے کہ وہ ڈومیسٹک کرکٹ میں بھی رویہ، توجہ، جوش و جذبہ برقرار رکھے،

اس کی باڈی لینگوئج مثبت رہے، یہ چیزیں ناردرن کی ٹیم میں نظر آتی ہیں اور شاداب خان الیون ہر میچ جیتنا چاہتی ہے اور بڑے نام نہ ہونے کے باوجود ٹیم ڈومیسٹک کرکٹ کی قدر کرتے ہوئے

اچھا کھیل پیش کررہی ہے، اس طرح کے کھلاڑیوں کو دنیا کی کسی لیگ میں بھی کارکردگی دکھانے کا موقع ملے تو اپنا ٹیلنٹ ثابت کریں گے۔

رمیز راجہ نے کہا کہ مثبت سوچ کے ساتھ میدان میں اترنے والے شاداب خان کی کارکردگی قابل ستائش رہی، ٹیم میں انرجی، لڑنے کی ہمت اور فیلڈنگ میں محنت نظر آئی۔