الله جسے چاہے عزت دے، سٹیو سمتھ نےآئی پی ایل میں آفریدی کےحق میں بول کر سب کوآگ لگا دی

304

کرکٹ سے جڑی ہرخبر اور زبردست ویڈیوز کے لیے ہمارا پیج لایک کریں
پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان اور سٹار آل راؤنڈر شاہد خان آفریدی جن کو ٹیم میں لالہ کے نام سے بلایا جاتا ہے اپنی سٹائلش اور دھواں دھار بلے بازی کے لیے مشہور ہیں۔ ان کے فین صرف پاکستان میں ہی نہیں بلکہ


پوری دنیا میں شائقین کے علاوہ کرکٹ کے کھلاڑی بھی ان کے فین ہیں۔ اگر کھلاڑیوں کی مقبو لیت کے بارے میں رفرنڈم کروایا جائے تو شاہد آفریدی پہلے نمبر پر آئیں گے۔

آج کل متحدہ عرب امارات میں کھیلی جارہی آئی پی ایل میں اگرچہ شاہد آفریدی نہیں کھیل رہے مگر ان کے چرچے آئی پی ایل میں ہو رہے ہیں۔ آسٹریلیا کے مایہ ناز بلے باز اسٹیو سمتھ بھی

لالہ کے مداح نکلے۔ راجستھان رائلز کی طرف سےکھیلنے والے اسٹیو سمتھ نے خاتون میز بان کو ا نٹر ویو دیتے ہوئے شاہد آفریدی کے بارے میں اپنے تعریفی کلمات کہے۔


جب انٹر ویو کے آخر میں انٹر ویو لینے والی لڑکی نے ان سے کہا کہ اگر آپ اپنے کپتان کو کوئی پیغام دینا چاہتے ہیں تو دے دیں۔ میزبان کے کہنے پر اسٹیو سمتھ اپنے کپتان کے نام پیغام لکھا اور

اس پیغام کو پڑھ کر انٹر ویو لینے والی لڑکی کی حیرانی کی انتہا نہ رہی ۔ اسٹیو سمتھ نے اپنےکپتان کے نام پیغام میں لکھا تھا کہ گیند بوم بوم کو دی جائے ۔ یہ پڑھ کر میز بان نے حیران ہو کر پوچھا کہ

یہ آپ نے کیا لکھا ہے اور اس کا کیا مطلب ہے؟ تو سمتھ نے جواب میں کہا کہ اس کا جواب یہ ہے کہ مجھے گیند دے کر باؤلنگ کروائی جائے ۔ انہوں نے کہا کہ میں شاہد آفریدی کی طرح باؤلنگ کرنے کی کوشش کرتا ہوں اس لیے میں نے لکھا ہے کہ بوم بوم کو گیند دی جائے۔


شاہد آفریدی ایک ہردلعزیز کرکٹر ہیں۔ اپنے کھیل کے علاوہ اپنی شخصیت کی وجہ سے بھی وہ لوگوں بہت مقبول ہیں۔ جہاں تک ان کے کھیل کا تعلق ہے تو ان کے زوردار چھکے بہت مشہور ہیں۔

حالانکہ ویسٹ انڈیز کے ہارڈ ہٹر اوپنر کرس گیل بھی چھکے لگانے میں کافی مشہور ہیں اور کھیل کے میدان میں شائقین کو اپنے کھیل سے بہت محظوظ کرتے ہیں مگر ایک بار کرس گیل نے کہا کہ

جتنی مقبولیت شاہد آفریدی کو ملی ہے میں اس کے دس فیصد بھی نہیں ہوں۔ شاہد آفریدی اپنے کیرئیر کے شرو ع میں ہی مقبولیت حاصل کر چکے تھے جب انہوں نے ون ڈے میں تیز ترین سنچری بنا کر عالمی ریکارڈ بنایا ۔

انہوں نےصر ف 37 گیندوں پر سنچری اسکور کی۔ اس کےبعد سے وہ کبھی لوگوں کے دلوں سے نہیں اترے۔ اگر کرکٹ کے میدان میں ان کی کارکردگی کو دیکھا جائے تو

انہوں نے 27 ٹیسٹ میچوں میں 5 سنچریوں اور 8 نصف سنچریوں کی مددسے 1716 رنز بنا رکھے ہیں۔ ان کا ٹیسٹ میں زیادہ سے زیادہ اسکور 156ہے۔ ون ڈے انٹر نیشنل میں انہوں نے

پاکستان کی طرف سے 398 میچ کھیلے ہیں اور 6 سنچریوں اور 39 نصف سنچریوں کی مدد سے 8064 رنز بنائے ہیں جن میں ان کا زیادہ سےزیادہ اسکور 124 ہے۔ ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل میں

لالہ نے 99 میچز کھیل کر 4 نصف سنچریوں کی مدد سے 1416 رنز بنائے ہیں۔ شاہد آفریدی کی بیٹنگ کی خاص بات ان کا اسٹرئیک ریٹ ہے جو کہ ون ڈ ے میں 117 اور ٹی ٹوئنٹی میں 150 ہے۔

اگر ان کی باؤلنگ کی کارکردگی کو دیکھا جائے تو 27 ٹیسٹ میچوں میں 48، ون ڈے انٹرنیشنل کے 398 میچوں میں 395 وکٹیں اور ٹی ٹوئنٹی کے 99 میچوں میں 98 وکٹیں حاصل کرچکے ہیں۔

شاہد آفریدی لیگ اسپن باؤلنگ کرتے ہیں اور اپنی تیز ڈیلیوریوں کے لیے مشہور ہیں ۔ ایک بار انہوں نے 130 کلو میٹر فی گھنٹہ کی رفتار سےبھی باؤلنگ کروائی ہے جو ورلڈ ریکارڈ ہے ۔