شاہد آفریدی نے سری لنکا کےسینیر کرکٹرز کو اہم ترین پیغام دے دیا.سری لنکن کرکٹرز کو کون آنے سے منع کر رہا ہے؟بتا دیا

21

ایک عام تاثُر یہ ہے کہ سری لنکا کی کرکٹ ٹیم کو اگر اس مُقام پر پُہنچانے میں کسی بھی مُلکی ٹیم کا کردار ہے تو وہ صرف پاکستان کی ٹیم کا ہے.لیکن اب جب کہ پاکستان پر مُشکل وقت آیا ہے تو سری لنکا کے سینیر کرکٹرز پاکستان آ کر کھیلنے سے کترا رہے ہیں.

یہ بات حقیقت ہے کہ 2007 میں سری لنکن ٹیم کے ساتھ ہی لاہو میں ایک ناخوشگوار واقع پیش آیا تھا جس کے بعد وہ پاکستان آنے میں ہچکچاہٹ کا شکار ہیں لیکن سری لنکا کے وہ کرکٹرز بھی جو کہ 2007 کے بعد 2 سے تین دفعہ پاکستان آ چُکے ہیں وہ بھی اب پاکستان نہیں آ رہے ہیں.

 

 

 

 

 

اس تمام مُعاملے پر پاکستان کے سابق کپتان شاہد آفریدی کا کہنا ہے کہ سری لنکن کرکٹرز کو یہ بات سمجھنی چاہیے کہ سری لنکا کے حالات بھی کوئی اتنے اچھے نہیں ہیں لیکن پھر بھی کبھی بھی پاکستانی سینیر کھلاڑیوں نے سری لنکا جانے سے ہچکچاہٹ کا مُظاہرہ نہیں کیا.

انکا کہنا تھا کہ سری لنکن کرکٹرز کو آئی پی ایل انتظامیہ اورفرنچائزز کی جانب سے پریشرائز کیا جا رہا ہے کہ اگر وہ پاکستان میں جا کر کھیلیں گے تو وہ آئی پی ایل مُعاہدے سے ہاتھ دھو بیٹھیں گے.

شاہد آفریدی کا کہنا تھا کہ پی ایس ایل کے پچھلے سیزن میں جب غیر مُلکی کھلاڑیوں کا پاکستان آکر کھیلنے کا مُعاملہ تھا تو میں نے سری لنکن کرکٹ بورڈ کے آفیشلز سے بات کی تھی اور اُنہوں نے کہا تھا کہ ہمارے کھلاڑی پاکستان جانا چاہتے ہیں لیکن آئی پی ایل انتظامیہ نے دھمکی دی ہے کہ اگر وہ پاکستان جائیں گے تو آئی پی ایل سے اپنا کنٹریکٹ ختم سمجھیں.

یاد رہے کہ آج سری لنکن حکومت نے اعلان کر دیا ہے کہ سری لنکا کا دورہ پاکستان شیڈول کے مُطابق ہو گا اور سری لنکن ٹیم اسی مہینے 3 ون ڈے اور تین ٹی ٹونٹی میچز کھیلنے پاکستان آ رہی ہے.